6

فاٹا اصلاحات : آرمی چیف جنرل قمر باجوہ نے دبنگ اعلان کر تے ہوئے پاکستانیوں کے دل جیت لیے

فاٹا (ویب ڈیسک ) قبائلی علاقوں کی ترقی کیلئے ایک ہزار ارب روپے خرچ کیے جائینگے : آرمی چیف فاٹا اصلاحات کاقبائلیوں کی مرضی سے فیصلہ ہوگا،قبائلی عوام نے ہر مشکل میں ساتھ دیا،ترقیاتی کاموں کی صورت میں اس کا ازالہ کریں گے ،لنڈی کوتل میں خطاب،جرگے سے ملاقات خیبر ایجنسی میں پاک افغان


سرحد کا دورہ،باڑ لگانے کے عمل کا جائزہ لیا،کورہیڈکوارٹرز پشاور میں فاٹا،خیبر پختونخوا کی صورتحال پر بریفنگ،ردالفساد کی پیش رفت سے آگاہ کیاگیا خیبر ایجنسی،راولپنڈی(نمائندہ دنیا ،خصوصی نیوز رپورٹر) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاہے کہ فاٹااصلاحات کا فیصلہ قبائلی عوام کی مرضی سے ہوگا،اس حوالے سے کوئی بھی فیصلہ مسلط نہیں کیا جائے گا۔آئندہ دس سال میں فاٹا کی ترقی کیلئے ایک ہزار ارب روپے خرچ کیے جائیں گے ۔امن وامان کیلئے افغانستان سے بات چیت جاری ہے ۔انہوں نے یہ بات خیبر ایجنسی میں جرگے سے خطاب کرتے ہوئے

کہی۔جمعہ کو سربراہ پاک فوج نے خیبرایجنسی کی تحصیل لنڈی کوتل کا دورہ کیا اور قبائلی جرگہ سے ملاقات کی،اس موقع پر جرگہ سے خطاب میں آرمی چیف نے کہاکہ قبائلی عوام نے ہر مشکل میں پاک فوج کا ساتھ دیا ،آپکی تکالیف کا ازالہ کیا جائے گا۔قبائلیوں نے روس سے لیکر امریکہ جنگ تک پاکستان کے لئے قربانیاں دی ہیں،اس کا ازالہ قبائلی عوام کو ملے گا،تعلیم ، صحت،صاف پانی، روزگار، سڑک اور دیگر ترقیاتی کاموں کی شکل میں ازالہ ملے گا،قبائلی علاقوں کی ترقی کیلئے آئندہ دس سال میں 1 ہزار ارب روپے سے ز ائد رقم خرچ کرینگے ۔ فاٹا اصلاحات پر قبائلی عوام کی خواہشات کے مطابق عمل درآمد کیا جائے گا،

قبائلی علاقوں میں امن وامان بحال رکھنے کی کوشش کریں گے ۔افغانستان اورپاکستان میں امن بحال ہونے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔افغانستان کے ساتھ بات چیت جاری ہے ، کوشش کرینگے کہ افغانستان کیساتھ اچھے سے اچھے تعلقات ہوں،وہ بھی پاکستان عزت سے آئیں اور ہم بھی وہاں عزت سے جائیں،دونوں جانب آزاد تجارت ہو ،جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاکہ پاک افغان بارڈر سے بلوچستان تک سرحد پر باڑ لگائیں گے ،قبائلی عوام دہشت گردوں کو پناہ نہ دیں اور نہ ہی ان کی مدد کریں۔پاک فوج قبائلی عوام کی بھرپور مدد کریگی،انہوں نے کہاکہ جلد قبائلی جرگے کو دعوت دونگا اور ان سے دیگرمسائل پر بھی بات چیت کرینگے

،اس موقع پر جرگے نے قبائلی روایات کے مطابق آرمی چیف کو دنبہ ، لنگی ،اور رائفل کاتحفہ پیش کیا،اس موقع پر کور کمانڈر پشاور،آئی جی ایف سی،پولیٹیکل ایجنٹ خیبر ایجنسی اور دیگر اعلیٰ افسران بھی موجود تھے ۔قبل ازیں آرمی چیف نے لنڈی کوتل میں پاک افغان بارڈر کا بھی دورہ کیا اور سرحدپر باڑلگانے کے کام کا جائزہ لیا۔بعدازاں کور ہیڈ کوارٹرز پشاور کے دورے کے دوران آرمی چیف کو فاٹااور خیبر پختونخوا کی سکیورٹی صورتحال کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی ۔انہیں آپریشن ردالفساد کے بارے میں بھی پیش رفت سے آگاہ کیاگیا۔

کیٹاگری میں : ARMY

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں